پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) سندھ کے صدر نثار کھوڑو نے کہا ہے کہ الیکشن کی گہما گہمی شروع ہوچکی ہے، ملک میں میثاق معیشت بھی ہونا چاہیے۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو میں نثار کھوڑو نے کہا کہ بڑی مشکل سے انتخابات کی تاریخ ملی ہے، ملک میں الیکشن 8 فروری 2024 کو ہوں گے۔  حلقہ بندیوں کی وجہ سے انتخابات التوا کا شکار ہوئے ہم نے 3 ماہ انتظار کیا، الیکشن کی گہما گہمی شروع ہو چکی ہے۔

نثار کھوڑو نے مزید کہا کہ 12 کروڑ ووٹر میں 65 فیصد نوجوان ہیں، جو ووٹنگ میں حصہ لیں اور اپنا کردار ادا کریں ۔ انتخابی مہم زور و شور سے جاری ہے، ہمیں میثاق جمہوریت یاد آتا ہے، یہ معاہدہ 2 پارٹیوں کے درمیان ہوا تھا، جس پر کئی پارٹیوں نے اعتراض اٹھائے۔

پی پی سندھ کے صدر نے یہ بھی کہا کہ ہمارا مقصد تھا سیاست کے خلاف سازش نہ کی جائے، ملک میں میثاق معیشت بھی ہونا چاہیے۔ ملک میں معیشیت کی مضبوطی میثاق اکانومی کی بھی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایسی منصوبہ بندی کی جائے کہ جسے آنے والی حکومتیں بھی جاری رکھیں، حکومتیں تبدیل ہونے سے ماحول تبدیل ہو جاتا ہے۔

نثار کھوڑو نے کہا کہ کوئی منصوبہ ایک حکومت بناتی ہے تو دوسری حکومت آکر اسے ختم کر دیتی ہے، ملکی استحکام کے لیے سیاسی پالیسی کا ہونا ضروری ہے۔ اتحاد بنتے رہتے ہیں سیاست اسی کا نام ہے، 170 سیاسی پارٹیاں ہیں، چند ہی پارٹیاں پارلیمانی قوت لے کر اسمبلی تک پہنچتی ہیں۔

Written By ویب ڈیسک

ٹائمز آف کراچی کے ویب ڈیسک ذریعے مختلف موضوعات پر خبریں شائع کی جاتی ہیں۔ جو سیاست، معاشرے، ثقافت اور تفریح ​​سمیت متعدد موضوعات کا احاطہ کرتی ہے۔